عشق کی داستان ہے پیارے

عشق کی داستان ہے پیارے
اپنی اپنی زبان ہے پیارے
ہم زمانے سے انتقام تو لیں
اک حسیں درمیان ہے پیارے
تونہیںمیں ہوں،میںنہیںتو ہے
اب کچھ ایسا گمان ہے پیارے
رکھ قدم پھونک پھونک کرناداں
زرےزرے میں جان ہے پیارے

شاعر : نامعلوم
کاتب: عمر احمد
غزل خواں: جگجیت سنگھ


-000-

اس تحریر کو شئیر کریں
صلہ عمر سوشل میڈیا
صلہ عمر پر دوسری تحاریر