سکندر اعظم، جب فتوحات کے جھنڈے گاڑ رہا تھا، اس کا لشکر ایک میں خیمہ بند ہوا۔ اس علاقے میں ایک شخص مشہور تھا، کہ وہ بندوبستی علاقے میں رہنا پسند نہیں کرتا، بلکہ وہ تو لوگوں سے میل جول بھی کم ہی رکھتا ہے، اور ہے کوئی بڑا قابل شخص۔ سکندر اعظم نے اس شخص سے ملاقات کی خواہش ظاہر کی، لیکن اس شخص نے جواباً یہ خواہش ٹھکرا دی، سکندر نے دوبارہ ایک دھمکی آمیز پیغام بجھوایا، کہ " اگر وہ سکندر سے ملاقات کرے تو اس کو انعامات سے نوازا جائے گا، جبکہ اگر وہ انکار کا مرتکب ہو تو اس کی گردن کاٹ دی جائے گی" جیسا کوئی پیغام!۔

جواباً اس شخص نے کہا کہ " میری جان سکندر کی مٹھی میں نہیں، بلکہ یہ تو میری اپنی مٹھی میں بھی نہیں ہے، تو یہ نہ وہ لے سکتا ہے، اور نہ ہی میں خود۔ دوسری بات یہ کہ اگر سکندر کے زہن میں یہ خیال ہو گا کہ میں اس کی دھمکی سے

-000-

اس تحریر کو شئیر کریں
صلہ عمر سوشل میڈیا
صلہ عمر پر دوسری تحاریر